احساس انڈر گریجویٹ سکالرشپ

    احساس انڈرگریجویٹ سکالرشپ پروگرام کےبارے میں جانیئے

    احساس انڈر گریجویٹ اسکالرشپ پروگرام کیا ہے؟
      احساس انڈر گریجویٹ اسکالرشپ پروگرام پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا انڈر گریجویٹ اسکالر شپ پروگرام ہے. یہ ملکی تاریخ کا پہلا ضرورت اور میرٹ پر مبنی سکالرشپ پروگرام ہے۔ اس پروگرام کے تحت، ہر سال کم آمدنی والے خاندانوں سے تعلق رکھنے والے 50,000 طلباء کو چار اور پانچ سالہ انڈر گریجویٹ پروگراموں میں ِتعلیم حاصل کرنے کے لیے اسکالرشپس دئیے جاتے ہیں ۔  آئندہ 4 سالوں میں 200,000 انڈر گریجویٹ اسکالرشپس ضرورت اور میرٹ کی بنیاد پر دئیے جائیں گے۔ا 50 فیصد اسکالرشپس خواتین طلباء کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔  اس 4 سالہ پروگرام پر عملدرآمد کیلئے کل24ارب روپے کا بجٹ مختص کیا گیا ہے۔
    اسکالرشپ میں کیا شامل ہے؟
     اس پروگرام کے تحت دئیے جانے والے اسکالرشپ میں 100 فیصدٹیوشن فیس کے ساتھ 4,000 روپے ماہانہ گزر بسر کا وظیفہ بھی شامل ہے۔ اس پروگرام کادائرہ کار چاروں صوبوں بشمول گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر تک پھیلا ہوا ہے۔
    احساس انڈر گریجویٹ اسکالرشپ پروگرام دوسرے اسکالرشپ پروگراموں سے کس طرح مختلف ہے؟
    احساس انڈر گریجویٹ اسکالرشپ پروگرام حکومت کی اسکالرشپ پالیسی میں تین نئی جہتوں کا عکاس ہے۔پہلی: احساس انڈر گریجویٹ اسکالرشپ پروگرام پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا ضرورت پر مبنی انڈر گریجویٹ اسکالر شپ پروگرام ہے۔جو کم آمدنی والے خاندانوں کے ہونہارطلبا ء کے لیے شروع کیا گیا ہے۔  دوسری: یہ سب سے بڑا قومی اسکالرشپ پروگرام ہے۔ گزشتہ 14سالوں میں، ایچ ای سی نے مجموعی طور پر 30,000انڈر گریجویٹ اسکالرشپس دی ہیں، جبکہ یہ اسکیم ہر سال 50,000اسکالر شپس دے گی۔اس اقدام سے تعلیم کے فروغ کی جانب حکومتی عزم ظاہر ہوتا ہے۔  تیسری: یہ اسکالرشپ پروگرام طالب علموں کے تعلیمی کیرئیر کی تشکیل میں معاون ثابت ہو گا۔ ماضی میں پوسٹ گریجویٹ پروگراموں کیلئے اسکالرشپس پرتوجہ مرکوز کی گئی تھی، لیکن احساس نے پاکستان کے تعلیمی شعبے میں اہم تبدیلی لاتے ہوئے 4-5سالہ انڈرگریجویٹ اسکالرشپ پروگراموں پر زور دیا ہے۔جو کم آمدن والے خاندانوں کے ذہین نوجوانوں کو غربت سے نکلنے میں مدد فراہم کرے گا۔
    پروگرام پر عملدرآمد کا نظام
    ہائر ایجوکیشن کمیشن احساس انڈر گریجویٹ اسکالرشپ پروگرام پر عمل درآمد کا ادارہ ہے۔     یہ پروگرام پورے ملک بشمول گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کی ایچ ای سی کے ذریعہ تسلیم شدہ سرکاری شعبے کی 135 یونیورسٹیوں میں چار سے پانچ سالہ انڈرگریجویٹ پروگراموں میں زیر تعلیم کم آمدنی والے پس منظر کے طلباء کو مالی معاونت فراہم کرتا ہے۔ طالب علم کی تعلیمی کارکردگی کی نگرانی کی جاتی ہے اور تسلی بخش کارکردگی کی صورت میں اسکالرشپ وصول کنندگان کو انڈرگریجویٹ پروگرام مکمل ہونے تک وظیفہ ملنا جاری رہے گا۔  ٹیوشن فیس براہ راست یونیورسٹیوں کو دی جائے گی جبکہ گزربسر کا وظیفہ براہ راست طالب علموں کے اکاؤنٹ میں جمع کروایا جائے گا۔
    اہل طالب علموں کے انتخاب کا طریقۂ کار
      انتخاب طالب علم کے جی پی اے اور خاندانی آمدن پر مبنی میرٹ اور ضرورت کی بنیاد پر ہوگا۔ درخواستیں ایچ ای سی کے پورٹل کے ذریعے آن لائن جمع کروائی جاسکتیں ہیں۔
    ٭ یونیورسٹی کی ایوارڈ کمیٹی، ایچ ای سی ٹیم کی معاونت کے ساتھ درخواست گزاروں کی فیملی آمدن اور جی پی اے کی تصدیق کرتی ہے۔٭ 45,000روپے ماہانہ سے کم خاندانی آمدن والے تمام اہل طالب علوں کو ان کے جی پی اے کے مطابق میرٹ پر پرکھا جاتا ہے۔٭حتمی ایوارڈ فہرستیں ہر یونیورسٹی میں آویزاں کی جائیں گی،جو ایچ ای سی اور یونیورسٹی کی ویب سائٹس پر بھی دستیاب ہونگی۔منتخب ہونے والے طالب علموں کو اپنے بنک اکاؤنٹ کھولنے ہونگے تاکہ گزربسر کا وظیفہ براہ راست ان کے اکاؤنٹ میں جمع کروایا جا سکے۔

      سال 2019/20 کے اسکالرشپس کا اسٹیٹس
    .پروگرام کے تحت 50,762 مستحق و ہونہار طلبا کو 4.9 ارب روپے کے سکالرشپ جاری کیئے گئے‎
    سال 2020/21 کے اسکالرشپس کا اسٹیٹس
    تعلیمی سال 2020/21میں 92،003طلباء و طالبات کو 8.4ارب روپے مالیت کےانڈرگریجویٹ س کالرشپس سے نوازا گیا۔
    رواں تعلیمی سال 2021/22کی نئی درخواستوں کیلیئے احساس انڈرگریجویٹ سکالرشپ کا آن لائن پورٹل 30ستمبر2021 کو دوبارہ کھول دیا گیا ہے۔ پورٹل درخواستوں کیلیئے 31دسمبر2021 تک کھلا رہے گا۔ صرف تعلیمی سال فال 2021 کے 4یا5سالہ انڈرگریجویٹ ڈگری پروگراموں میں نئےداخل شدہ طلباءجنکے گھر کی ماہانہ آمدنی 45ہزار سےکم ہےاحساس انڈرگریجویٹ سکالرشپ کی آن لائن درخواستیں جمع کرواسکتے ہیں۔